کاپی رائٹس

اُردو رائٹر ویب سائیٹ کے تمام جملہ حقوق بشمول کاپی رائٹس ،ٹریڈ مارک،ڈیزائن کے حقوق اور دیگر تخلیقی حقوق (چاہے وہ پہلے سے رجسٹرڈ ہوں یا نہ ہوں) یعنی اس ویب سائیٹ پر شائع ہونے والا تمام تر تحریری مواد کے جملہ حقوق راؤ محمد شاہد اقبال اور ”اُردو رائٹرز“ ویب سائیٹ کو لائسنس فراہم کرنے والے اداروں کے نام محفوظ ہیں۔آپ سے توقع کی جاتی ہے آپ اُردو رائٹر پر شائع ہونے والے مواد کو کسی بھی صورت میں اپنے ذاتی اور غیر کاروباری استعمال کے علاوہ نہ تو نقل کریں گے اور نہ ہی کسی دوسری جگہ شائع کرنے کی کوشش کریں گے۔اِس اُصول کا اطلاق اُن اخبارات،جرائد اور رسائل کی آفیشل ویب سائیٹ پر لاگو نہیں ہو گا۔ جن کے لیئے راؤ محمد شاہد اقبال نے یہ تحریریں لکھیں تھیں اور جنہوں نے یہ تحاریر اپنے اخبارات،جرائد اور رسائل میں شائع کیں تھیں۔
وہ نام،تصاویر اور لوگوز جن سے ”اُردو رائٹر“ یا کسی تیسرے فریق (تھرڈ پارٹی اور اِن کی تخلیقات اور خدمات کی شناخت ہوتی ہے۔ان سب کے استعمال کے جملہ حقوق مذکورہ فریقین کے نام محفوظ ہیں۔ان شرائط سے ہم یہ اخذ کرتے ہیں کہ کسی بھی استعمال کنندہ کو ”اُردو رائٹر“ یا تیسرے فریق کے ٹریڈ مارک،ڈیزائن اور کاپی رائٹس کے استعمال حق یا لائسنس حاصل نہیں ہوسکتا۔
اس پالیسی کا مقصد یہ واضح کرنا ہے کہ اس ویب سائٹ کو استعمال کرنے کے دوران آپ کی طرف سے فراہم کی گئی معلومات کواُردو رائٹر کیسے استعمال کرتا ہے اور انہیں محفوظ رکھتا ہے۔ اُردو رائٹر آپ کے اخفاء کی حفاظت کو یقینی بنانے کا پابند ہے۔ ویب سائٹ استعمال کرنے کے دوران اگر آپ سے چند ایسی مخصوص معلومات طلب کی جائیں جن سے آپ کی شناخت ظاہر ہوسکتی ہے، تو ایسی صورت میں آپ کی فراہم کردہ معلومات کو صرف یہاں بیان کی گئی پالیسی کے تحت ہی استعمال کیا جائیگا۔
حق اشاعت کے موجودہ قانون کے تحت اجازت کے علاوہ، آپ اس ویب سائٹ پر شائع ہونے والا کسی بھی قسم کا تحریری مواد اردو رائٹر ویب سائیٹ کے مدیر کی تحریری اجازت کے بغیر کسی دوسری ویب سائٹ پر دوبارہ پیش کرنے کے حقوق نہیں رکھتے۔ اس ویب سائٹ پر  شائع شدہ تمام تر تحریری مواد کے کاپی رائٹس یا جملہ حقوق اردو رائٹر ویب سائیٹ کے نام مکمل طور پر محفوظ ہیں۔ اُردو رائٹر کی انتظامیہ اس پالیسی کو گزرتے وقت کے ساتھ تبدیل کرنے کی مجاز ہے۔ تازہ ترین معلومات کیلئے اس صفحہ کو وقتاً فوقتاً ملاحظہ کرتے رہیں، تاکہ ہماری پالیسی سے آگاہی حاصل ہوتی رہے۔ یہ پالیسی 08 جولائی 2019 سے نافذ العمل ہوگی۔